سلسلہ عالیہ نقشبندیہ مجددیہ کا شجرہ مبارکہ

 

 سلسلہ مبارکہ

نقشبندیہ مجددیہ

گرہمی خواہی کہ گردی دردوعالم ارجمند

دائماباشی غلام خاندان نقشبند

شجرہ مبارکہ

بسم اللہ الرحمن الرحیم

اللہم صل علی سیدنامحمدوعلی ال سیدنا محمدوبارک وسلم بعددکل شی معلوم لک

حمد کل ہے رب کی ذات کبریا کے واسطے          اور درودونعت مولی مجتبی کےواسطے

اے خدا تو اپنی ذات کبریا کے واسطے               فضل کر مجھ پر محمدمصطفی کے واسطے

حضرت صدیق اکبر یار غار مصطفے                 صدق دے کامل تو ایسے پر صفا کیواسے

حضرت سلمان فارس شمس برج معرفت              درد اپنا دے مجھے اس جاں فد کیواسطے

حضرت قاسم تھے پوتے حضرت صدیق کے      عالی ہمت کر مجہے اس ذوالعلا کیواسطے

حضرت جعفرامام اتقیا واصفیا                          مطمئن مجھ کو بنا اس ذی عطا کیواسطے

 قطب عالم غوث اعظم شیخ اکبر بایزید            نور عرفان دے مجھے نورالورای کیواسطے

خواجہ حضرت بوالحسن جو ساکن خرقان تھے    زکر قلبی دے مجھے اس باصفا کے واسطے

حضرت خواجہ ابوالقاسم جو تھے گرگان کے     دور کر عصیاں میرے اس پر حیا کے واسطے

فارمدی شیخ عالم خواجہ حضرت بوعلی               دے مجھے اعمال صالح اولیاکے واسطے

حضرت خواجہ ابو یوسف جو تھے ہمدان کے          نفس ہو مغلوب میرا مقتدا کے واسطے

غجدوانی خواجہ عبدالخالق شیخ کمال             دل منور کر مرا شمس الضحی کے واسطے

حضرت خواجہ محمد عارف ریوگری               اپنا عارف کر مجھے اس پیشوا کے واسطے

ساکن انجیر فغنہ یعنی محمود ولی                   دے مجھے توفیق حق اس بے بہا کیواسطے

حضرت خواجہ عزیز ان علی رامیتنی                     نام میرا ہو عزیز اس بے ریا کے واسطے

خواجہ بابا سماسی عاشق زات خدا               عشق صادق دے مجھے اس با صفا کیواسطے

میر میراں حضرت شاہ کلال متقی                     کر روا سب حاجتیں اس پر سخاکیواسطے

حضرت خواجہ بہاءالدین جو تھے نقشبند              کر منقش دل مرا نور الہدی کے واسطے

 حضرت خواجہ علاءالدین جو عطار تھے                دل معطر ہو مرا اس خش لقا کے واسطے

حضرت یعقوب چرخی بیکسوں کے وستگیر       میری غفلت دور کر اس با عطا کے واسطے

حضر خواجہ عبیداللہ جو احرار تھے                        دمبدم ہو عشق زائد دلربا کے واسطے

حضرت خواجہ محمد زاہد زہد کمال                 مجھ کو زاہد کر دے اس شاہ ولا کے واسطے

خواجہ درویش محمد میر درویشیاں ہوے     خاص درویشوں سے کر اس حق نما کیواسطے

خواجگی خواجہ محمد واقف اسرار حق           مج کو بھی خواجہ بنا مرد خدا کے واسطے

حضرت خواجہ محمد باقی بااللہ رازداں                رازداں مجھ کو بنا اس دلکشا کے واسطے

حضرت خواجہ مجددالف ثانی بحر علم       مجھ کو صبر وشکر دے بدرالدجی کے واسطے

عروۃالوثقی محمد خواجہ معصوم اہل دل                 دل منور کر مرا اس باصفا کے واسطے

خواجہ سیف الدین صاحب سیف تھے جو دین کے      سرکٹے حرص و ہوا کا زی لقا کے واسطے

حافظ محسن ولی دہلوی تھے باخدا           معرفت دے مجھ کو اس شمس الہدی کیواسطے

سید نور محمد تھے بدایونی ولی                      عشق و عرفاں کر عطا اس پیشوا کیواسطے

مرزامظہرجان جاناں تھے حبیب اللہ شھید           رکھ شریعت پر مجھے پیر ہدی کے واسطے

خواجہ عبداللہ شہ جو تھے مجدد دہلوی                  خاص بندوں سے بنا اس رہنما کے واسطے  

بو سعید احمد کہ جو غوث زماں تھے بیگماں          مجھ کو بھی اسعد بنا اس با وفا کے واسطے

خواجہ احمد سعید دہلوی مدنی ہوۓ                    عشق دے اپنا مجھے اس بے ریا کے واسطے

حاجی دوست محمد ساکن قندھار تھے                   قلب زاکر رکھ مرا اس خش ادا کے واسطے

خواجہ عثمان دامانی جو قطب وقت تھے                 مجھ کو بھی ویسا بنا شیر خدا کے واسطے

شہ سراج الدین شان حق سراج معرفت                    قلب روشن کر مرا اس با صفا کیواسطے

شاہ تاج ا لاولیا فضلعلی بے عدیل                          دے سیہ دل کی دوا اس پرضیا کے واسطے

 قطب دوراں روح عرفاں سعد دیں خوتجہ سعید           دل ہو انور اس قریشی پارسا کے واسطے

قطب دین عین ولایت شاہ زوار حسین                    شرع وایماں کر عطا اس با صفا کیواسطے

یا الہی میرے دل کو نور سے معمور کر                           بندہ مخلص غلام مصطفی کیواسطے

کر قبول ان ناموں کی برکت سے ہر جائز دعا                یا رب اپنی رحمت بے انتہا کے واسطے

بحر عصیاں میں الہی میں سراپا غرق ہوں                   فضل تیرا چاہیے مجھ مبتلا کے واسطے

اے خدا مجھ کو تہی دستی کی کلفت سے بچا          اپنے فضل ورحم اور جودوسخا کے واسطے

میرے ہر دشمن کو اپنے فضل سے مغلوب کر                 اپنی رحمانی رحیمی اور عطا کے واسطے

یا الہی شر شیطانی سے تو محفوظ رکھ                      ہر عمل ہو بے ریا تیری رضا کے واسطے

ہو منور قبر میری اور دےمجھ کو نجات                    اے خدا حضرت محمد مصطفے کے واسطے